’ہم کسی اور کو سمجھنے کا دعوی کیسے کرسکتے ہیں جبکہ اکثر اوقات ہم خود اپنے آپ ہی کو نہیں سمجھ پاتے۔‘‘

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *